وَلَدُ الزِّنَا

English Illegitimate child/Bastard
اردو زنا سے پیدا ہونے والا بچہ
Indonesia Anak hasil zina

الطِّفْلُ الَّذِي حَمَلَتْ بِهِ أُمُّهُ مِنْ زِنَا.

English A child born through unlawful sexual intercourse.
اردو وہ بچہ جس کی ماں زنا کے سبب اس سے حاملہ ہوئی۔
Indonesia Anak yang dikandung oleh ibunya dari hasil perzinaan.

وَلَدُ الزِّنَا هُوَ الابْنُ الَّذِي تَحْمِلُ بِهِ أُمُّهُ مِنْ غَيْرِ نِكَاحٍ وَلاَ مِلْكِ يَمِينٍ -أَيْ لَمْ تَلِدْهُ مِنْ سَيِّدِهَا إِذَا كَانَتْ أَمَةً رَقِيقَةً غَيْرَ حُرَّةٍ-، وَيُسَمَّى: وَلَدًا غَيْرَ شَرْعِي، وَيُنْسَبُ وَلَدُ الزِّنَا إِلَى أُمِّهِ وَأَهْلِهَا؛ لِأَنَّ مَاءَ الزَّانِي فاسِدٌ وَلِذا لا يُلحَقُ بِهِ الوَلَدُ.

English "Walad az-zinā" (illegitimate child) is a child who was conceived by his mother outside wedlock or whose mother was a slave-girl who was impregnated by other than her master. It is also called "walad ghayr shar‘i" (illegitimate child); Such a child is attributed to the mother because he is the result of unlawful sexual intercourse, which prevents him from being legally attributed to the man.
اردو ’ولدُ الزنا‘ وہ بچہ ہے جس کی ماں بغیر نکاح، اور ملکیتِ یمین کے اس سے حاملہ ہوئی ہو، یعنی بچہ عورت کے لونڈی ہونے کی صورت میں اپنے آقا کے نطفہ سے نہ ہوا ہو۔ اس بچہ کو غیر شرعی (ناجائز) اولاد کہا جاتا ہے۔ ولدُ الزنا کی نسبت اس کی ماں اور اس کے اہلِ خانہ کی طرف ہوگی، اس لیے کہ زانی کا نطفہ فاسد ہوتا ہے اس کی طرف اولاد کو منسوب نہیں کیا جاسکتا۔
Indonesia Anak hasil zina adalah anak yang dikandung oleh ibunya bukan dari hasil pernikahan legal dan bukan milki yamīn - maksudnya anak ini tidak dilahirkan dari seorang ibu yang menjadi hamba sahaya dari seorang majikan, bukan wanita merdeka-. Anak ini dinamakan "anak tidak syar'i". Anak hasil zina dinisbahkan kepada ibunya dan keluarganya. Sebab, air mani lelaki pezina itu tidak sah, karena itulah si anak tidak dinisbahkan kepadanya.

يَذْكُرُ الفُقَهَاءُ وَلَدَ الزِّنَا فِي مَوَاضِعَ عَدِيدَةٍ مِنْهَا: كِتَابُ الزَّكَاةِ فِي بَابِ مَصَارِفِ الزَّكَاةِ ، وَكِتَابُ الأَضَاحِي فِي بَابِ العَقِيقَةِ ، وَكِتَابُ النِّكَاحِ فِي بَابِ الكَفَاءَةِ فِي النِّكَاحِ ، وَكِتَابُ المَوَارِيثِ فِي بَابِ شُرُوطِ الإِرْثِ ، وَكِتَابُ القَضَاءِ فِي بَابِ شُرُوطِ الشَّهَادَةِ ، وَغَيْرُهَا.

بداية المجتهد ونهاية المقتصد : 4 / 142 - أنيس الفقهاء في تعريفات الألفاظ المتداولة بين الفقهاء : ص188 - فتح القدير لابن الهمام : 31/5 - الفتاوى الكبرى لابن تيمية : 82/5 -