حَوْقَلَةٌ

اردو لاحول و لا قوة إلا بالله پڑھنا
Indonesia Haukalah

قَوْلُ: "لا حَوْلَ ولا قُوَّةَ إلّا بِاللهِ".

اردو لاَ حَوْلَ وَلاَ قُوَّةَ إِلَّا بِاللهِ پڑھنا۔
Indonesia Ucapan "lā ḥaula wa lā quwwata illā billāh".

الحَوْقَلَةُ: لَفْظٌ مُخْتَزَلٌ مِن عِبارَةِ: لا حَوْلَ ولا قُوَّةَ إلّا بِاللهِ، كالبَسْمَلَةِ والحَمْدَلَةِ، ومعنى الحَوْقَلَةِ: لا تَحَوُّلَ مِن حالٍ إلى حالٍ ولا اسْتِطاعَةَ ولا قُوَّةَ على الطَّاعَةِ إلّا بِمَشِيئَةِ اللهِ تعالى وتَوْفِيقِهِ، والحاءُ والواوُ مِن الحَوْلِ، والقافُ مِن القُوَّةِ، واللاَّمُ مِن اسْمِ اللهِ عَزَّ وَجَلَّ.

اردو حوقلہ:’لَا حَوْلَ وَلَا قُوَّةَ إِلَّا بِاللهِ‘ کا اختصار ہے جیسے ’بسملہ‘ (بسم اللہ پڑھنا) اور ’حمدلہ‘ (الحمد للہ کہنا) کے الفاظ ہیں ’حوقلہ‘ کا معنی ہے: اللہ کى توفیق اور مشیئت کے بغیر نہ کوئی نیکی کرنے کى سکت ہے اور نہ ہی اس کی منشا کے بنا حالات بدلتے ہیں۔ لفظ ”حوقل“ میں ’حاء‘ اور ’واو‘ کو ’الحول‘ سے، ’قاف‘ کو ’القوۃ‘ سے اور ’لام‘ کو لفظ جلالہ یعنی اللہ عزوجل کے اسمِ گرامی سے لیا گیا ہے۔
Indonesia Al-Ḥauqalah adalah akronim dari ungkapan "lā ḥaula wa lā quwwata illā billāh" seperti basmalah dan ḥamdalah. Makna al-ḥauqalah adalah tidak ada perubahan dari satu kondisi kepada kondisi lainnya, tidak ada kemampuan dan kekuatan dalam melaksanakan ketaatan kecuali dengan kehendak dan taufik dari Allah -Ta’ālā-. Huruf Ḥā` dan Wāwu dari kata 'al-ḥaul', huruf Qāf dari kata 'al-quwwah', sedangkan huruf Lām dari nama Allah -'Azza wa Jalla-.

الحَوْقَلَةُ: قَوْلُ: لا حَوْلَ ولا قُوَّةَ إلّا بِاللهِ.

اردو حَوْقَلَہ کہتے ہیں لاَ حَوْلَ وَلاَ قُوَّةَ إِلَّا بِاللهِ پڑھنا۔
Indonesia Al-Ḥauqalah adalah ucapan "lā ḥaula wa lā quwwata illā billāh".

الحَوْقَلَةُ: قَوْلُ: لا حَوْلَ ولا قُوَّةَ إلّا بِاللهِ، يُقال: حَوْقَلَ، يُحَوْقِلُ، أيْ: قال: لا حَوْلَ ولا قُوَّةَ إلّا بِاللهِ. ومِن مَعانِيها أيضاً في اللُّغَةِ: سُرْعَةُ المَشْيِ، والاعْتِمادُ باليَدَيْنِ على الخِصْرِ عند المَشْيِ.

حوقل

مقاييس اللغة : (2/88) - الزاهر في معاني كلمات الناس لابن الأنباري : (1/11) - تهذيب اللغة : (4/32) - المحكم والمحيط الأعظم : (3/3) - لسان العرب : (11/159) - تاج العروس : (38/264) - تحرير ألفاظ التنبيه : (ص 55) - المطلع على ألفاظ المقنع : (ص 52) - القاموس الفقهي : (ص 106) - معجم لغة الفقهاء : (ص 188) - التعريفات الفقهية : (ص 82) - الموسوعة الفقهية الكويتية : (18/248) - فتح الباري شرح صحيح البخاري : (11/500) - أسنى المطالب في شرح روض الطالب : (1/130) - نيل المارب بشرح دليل الطالب : (1/118) -