التصنيف: أخرى .

تسري

English Concubinage
اردو تسرّی، مملوکہ باندی کو جماع کے لیے خاص کرنا
Indonesia Memperselir

اتِّخَاذُ الأَمَةِ المَمْلُوكَةِ لِلْجِمَاعِ مِنْ قِبَلِ سَيِدِهَا.

English Taking a female slave as a concubine by her master.
اردو آقا کا اپنی کسی مملوکہ باندی کو جماع کے لیے منتخب کرنا۔
Indonesia Menjadikan budak perempuan sebagai selir untuk digauli oleh tuannya.

التَّسَرِّي هُوَ أَنْ يَتَّخِذَ السَّيِّدُ أَمَتَهُ التي يَمْلِكُهَا لِلْجِمَاعِ بِشُرُوطٍ مَعْلُومَةٍ تَكْفُلُ لِلْجَارِيَةِ حُقُوقَهَا وَكَرَامَتَهَا ، وَمِنْ هَذِهِ الشُّرُوطِ: 1- مَنْعُ اسْتِرْقَاقِ النِّسَاءِ الكَافِراتِ إِلَّا فِي حَرْبٍ مَشْرُوعَةٍ. 2- مَنْعُ الاسْتِمْتَاعِ بِالأَسِيرَةِ إِلَّا إِذَا صَارَتْ مِلْكًا لَهُ بِأَمْرٍ مِنَ الحَاكِمِ. 3- مَنْعُ وَطْئِهَا إِلَّا بَعْدَ عِدَّةِ استبراء الرَّحِمِ. 4- حِفْظُ حُقُوقِهِنَ مِنْ نَفَقَةٍ وَمَأْوى وَأَمْنٍ وَعِلاَجٍ وَغَيْرِ ذَلِكَ. وَمِنْ مَقَاصِدِ التَّسَرِّي: 1- حِمَايَةُ الإِمَاءِ مِنَ الوُقُوعِ فِي الفَاحِشَةِ. 2- حَلُّ مُشْكِلَةِ الزَّوَاجِ لغَيْرِ القَادِرِينَ. 3- حِمَايَةُ المُجْتَمَعِ مِنَ الانْحِلاَلِ فِي الرَّذِيلَةِ. 4- التَّسَرِّي وَسِيلَةٌ لِلعِتْقِ وَالتَّحْرِير ، حَيْثُ شَرَعَ الإِسْلاَمُ أَنَّ الجَارِيَةَ التي تَلِدُ مِنْ سَيِّدِهَا يَكونُ وَلَدُهَا حُرًّا مُبَاشَرَةً بَعْدَ وِلاَدَتِهِ ، وَتكونُ هِيَ حُرَّةً بَعْدَ وَفَاةِ سَيِّدِهَا ، وَلاَ تُبَاعُ فِي حَيَاةِ سَيِّدِهَا. والفَرْقُ بَيْنَ التَسَرِّي وَبَيْنَ التَزَوُّجِ أَنَّ التَسَرِّي هُوَ الوَطْءُ والجِمَاعُ بِسَبَبِ مِلْكِ اليَمِينِ وَالتَزَوُّجُ هُوَ الوَطْءُ بِعَقْدِ النِّكَاحِ .

English "Tasarri" (concubinage) is that the master copulates with a female slave whom he owns under certain conditions that preserve her rights and dignity. To name some of these conditions: 1. Forbiddance of enslaving non-Muslim women except when taken as captives in the course of a legitimate war. 2. Forbiddance of seeking pleasure with the female captive except after the ruler grants a man ownership of her. 3. Forbiddance of having sexual intercourse with her except after her waiting period ends to ascertain that she is not pregnant. 4. Preserving and protecting her rights, such as supporting her financially, housing, protection, medical care, etc. From the purposes of "tasarri": 1. Protecting the female slaves from committing unlawful sexual intercourse. 2. Solving the problem of marriage for those who cannot afford it. 3. Protecting the society from plummeting into immorality. 4. It is a means by which slaves are manumitted and freed. Islam legislated that when a female slave bears the child of her master, the child is born free, and she becomes free after the death of her master, and she is not to be sold to anyone when her master is alive. The difference between "tasarri" and marriage is that "tasarri" is having sexual relation based on ownership (of a slave girl), while marriage is having sexual relation based on marriage contract.
اردو ’تَسرِّى‘ کا معنی یہ ہے کہ آقا اپنی مملوکہ باندی کو کچھ ایسی معلوم شرائط کے ساتھ جماع کے لیے خاص کرلے جو باندی کے حقوق اور عزت کی ضامن ہوں۔ ان شرائط میں سے کچھ یہ ہیں: 1- کافر عورتوں کو ماسوا مشروع جنگ کے باندیاں بنانا ممنوع ہے۔ 2- قیدی عورت سے جماع ممنوع ہے سوائے اس صورت کے جب وہ حاکم کی اجازت سے اس کی ملکیت میں آجائے۔ 3- باندی سے وطئ استبراءِ رحم کی عدت کے بعد جائز ہے۔ 4- ان کے حقوق جیسے نان نفقہ، گھر، امن اور علاج وغیرہ کو پورا کرنا۔ ’تسری‘ کے کچھ مقاصد یہ ہیں: 1) باندیوں کو بدکاری میں پڑنے سے بچانا۔ 2) جو لوگ شادی کی قدرت نہیں رکھتے ان کی اس مشکل کو حل کرنا۔ 3) معاشرے کو بگاڑ کا شکار ہونے سے بچانا۔ 4) ’تسری‘ آزادی کا ایک ذریعہ ہے۔ کیونکہ اسلام کی رو سے وہ باندی جو اپنے آقا سے بچہ جن دے اس کا بچہ پیدائش کے فوراً بعد ہی آزاد ہوجاتا ہے اور یہ باندی اپنے آقا کی وفات کے بعد آزاد ہوجاتی ہے اور آقا کی زندگی میں اسے بیچا نہیں جا سکتا۔ تسرّی اور شادی میں فرق یہ ہے کہ تسری میں وطئ ملکِ یمین کے سبب جائز ہوتی ہے جبکہ شادی میں وطئی عقدِ نکاح کے سبب جائز ہوتا ہے۔
Indonesia At-Tasarrī adalah tindakan seorang tuan menjadikan budak perempuan yang dimilikinya untuk digauli dengan berbagai syarat tertentu yang menjamin hak-hak dan kehormatan budak itu. Di antara syarat tersebut adalah: 1. Larangan menjadikan budak dari kalangan perempuan kafir kecuali melalui pertempuran yang disyariatkan. 2. Larangan menggauli tawanan wanita kecuali jika ia sudah menjadi miliknya atas perintah dari penguasa. 3. Larangan menggaulinya kecuali setelah selesai memastikan kebersihan rahimnya (dari janin). 4. Menjaga hak-haknya seperti nafkah, tempat tinggal, keamanan, pengobatan dan sebagainya. Di antara tujuan at-tasarrī adalah: 1. Melindungi para budak perempuan dari terperosok ke dalam perbuatan zina. 2. Solusi problematika pernikahan bagi para lelaki yang tidak mampu. 3. Melindungi masyarakat dari kemerosotan budi pekerti. 4. At-Tasarrī merupakan sarana pembebasan dan kemerdekaan budak. Islam mensyariatkan bahwa seorang budak perempuan yang melahirkan anak dari tuannya, maka anak itu menjadi merdeka secara langsung setelah kelahirannya, dan dia juga menjadi bebas setelah wafat tuannya. Dia sudah tidak bisa dijual selama tuannya masih hidup. Perbedaan antara memperselir dengan menikah adalah bahwa memperselir adalah menggauli (wanita) dengan sebab kepemilikan (perbudakan), sementara menikah adalah mempergauli wanita dengan akad yang sah.

اتِّخَاذُ السُّرِّيَّةِ ، وَهِيَ الأَمَةُ الْمَمْلُوكَةُ يَتَّخِذُهَا سَيِّدُهَا لِلْجِمَاعِ ، وَأَصْلُ التَّسَرِّي مِنَ السِّرِّ ، وَهُوَ الْجِمَاعُ ، وَقِيلَ أَصْلُهُ مِنَ السُّرُورِ ؛ لِأَنَّ الرَّجُلَ يَفْرَحَ بِذَلِكَ وَلِأَنَّهُ وَضَعَهَا فِي حَالٍ أَفْضَلَ مِنْ سَائِرِ الجَوَارِي.

English "Tasarri": taking a "surriyyah", i.e. a female slave whose master takes to have sexual intercourse with. Derived from "sirr", which means sexual intercourse; also said to be derived from "suroor", which means joy and happiness, because this makes the man happy and because he puts her in a better situation than the rest of the female slaves.
اردو تسرّی کا لغوی معنی ہے ’سُرِیّہ اختیار کرنا‘، سُرِیّہ سے مراد وہ باندی ہے جسے اس کا مالک جماع کے لیے خاص کرتا ہے۔ یہ لفظ دراصل ’السِّرّ‘ سے ماخوذ ہے جس کا معنی ہے ’جماع‘۔ ایک اور قول کی رو سے یہ دراصل ’السُرُور‘ سے نکلا ہے کیونکہ آدمی اس سے خوش ہوتا ہے اور کیونکہ اس نے بقیہ باندیوں کے مقابلے میں اس باندی کو اچھی حالت میں رکھا ہے۔
Indonesia Mengambil as-surriyyah adalah budak perempuan yang dijadikan selir oleh tuannya untuk disetubuhi. At-Tasarrī berasal dari kata "as-sirr", yaitu bersetubuh. Dikatakan pula, asalnya dari kata "as-surūr" (kegembiraan); karena laki-laki mendapatkan kesenangan dengan perbuatan ini, dan karena ia menempatkan budak itu pada kondisi yang lebih baik dari budak-budak lainnya.

يَرِدُ مُصْطَلَحُ (التَسَرِّي) فِي مَوَاطِنَ أُخْرَى مِنْهَا: كِتابُ البٌيوعِ في بابِ المُضَارَبَةِ ، كِتابُ الرِّقِ في بَابِ أَحْكَامِ المُكَاتَبَةِ ، وَبَابِ أَحْكَامِ أُمِّ الوَلَدِ ، وَكِتَابُ الحُدُودِ فِي بَابِ حَدِّ الزِنَا.

اتِّخَاذُ السُّرِّيَّةِ ، وَهِيَ الأَمَةُ الْمَمْلُوكَةُ يَتَّخِذُهَا سَيِّدُهَا لِلْجِمَاعِ ، يُقَال : تَسَرَّى الرَّجُل جَارِيَتَهُ وَتَسَرَّى بِهَا وَاسْتَسَرَّهَا إِذَا اتَّخَذَهَا سُرِّيَّةً ، وَأَصْلُ التَّسَرِّي مِنَ السِّرِّ ، وَهُوَ الْجِمَاعُ ، وَقِيلَ أَصْلُهُ مِنَ السُّرُورِ ؛ لِأَنَّ الرَّجُلَ يَفْرَحَ بِذَلِكَ وَلِأَنَّهُ وَضَعَهَا فِي حَالٍ أَفْضَلَ مِنْ سَائِرِ الجَوَارِي.

سرر

مختار الصحاح : ص326 - تاج العروس : 12 /19 - التعريفات للجرجاني : ص58 - الكليات : ص514 - طلبة الطلبة في الاصطلاحات الفقهية : ص104 - الـمغني لابن قدامة : 7 /86 - البناية شرح الهداية : 6 /217 - مختار الصحاح : ص326 -