بيع

English Sale transaction
اردو بیع، خرید وفروخت
Indonesia Jual beli

مُبَادَلَةُ مَالٍ بِـمَالٍ بِقَصْدِ التَّـمَلُّكِ وَالتَّمْلِيكِ.

English Exchange of a property for another for the purpose of ownership and transferring ownership.
اردو (کسی چیز کا) مالک بننے یا مالک بنانے کے ارادے سے مال کا مال کے ساتھ تبادلہ کرنا۔
Indonesia Tukar menukar harta dengan harta lain untuk tujuan memiliki dan memberikan kepemilikan.

البَيْعُ عَقْدٌ شَرْعِيٌّ يَلْتَزِمُ بِهِ طَرَفَانِ ، البَائِعُ بِأَنْ يَنْقُلَ لِلْمُشْتَرِي مِلْكِيَّةَ شَيْءٍ أَوْ حَقًّا مَاليًّا ، وَالمُشْتَرِي يَلْتَزِمُ بِتَمْلِيكِ ثَمَنٍ لِلْبَائِعِ ، وَأَرْكَانُ البَيْعِ ثَلاَثَةٌ وَهِيَ الصِّيغَةُ وَالعَاقِدانِ وَالمَعْقُودُ عَلَيْهِ ، وَشُرُوطهُ سَبْعَةٌ: 1 - التَّرَاضِي مِنَ البَائِعِ وَالمُشْتَرِي. 2 - أَنْ يَكُونَ العَاقِدُ جَائِزَ التَّصَرُّفِ بِأَنْ يَكُونَ كُلٌّ مِنْهُمَا حُراً مُكَلَّفاً رَشِيداً. 3 - أَنْ يَكُونَ المَبِيعُ مِمَّا يُبَاحُ الانْتِفَاعُ بِهِ مُطْلَقاً. 4 - أَنْ يَكُونَ المَبِيعُ مَمْلُوكاً لِلْبَائِعِ ، أَوْ مَأْذُوناً لَهُ فِي بَيْعِهِ وَقْتَ العَقْدِ. 5 - أَنْ يَكونَ المَبِيعُ مَعْلوماً لِلْمُتَعَاقِدَيْنِ بِرُؤْيَةٍ أَوْ صِفَةٍ. 6 - أَنْ يَكونَ الثَّمَنُ مَعْلوماً. 7 - أَنْ يَكونَ المَبِيعُ مَقْدُوراً عَلَى تَسْلِيمِهِ.

English "Bay‘" (sale transaction) is a Shariah-approved contract that is binding for two parties. The seller transfers the ownership of an item or a pecuniary right to the buyer, and the buyer gives the seller a price in return. There are three pillars for "bay‘": the words used to show mutual consent, the buyer and seller, and the purchased commodity. There are seven conditions for "bay‘": 1. Mutual consent between the buyer and the seller. 2. The buyer and seller should be qualified to manage their affairs, i.e. they must be free, legally competent, and mature. 3. The merchandise should be of a lawful benefit. 4. The merchandise should be the property of the seller, or he should be authorized to sell it at the time of contract. 5. The merchandise should be known to both parties, either by seeing it or by description. 6. The price should be defined. 7. The merchandise should be submittable (deliverable).
اردو ’بیع‘ ایک شرعی عقد ہے جس کے پابند دونوں فریق ہوتے ہیں۔ ’بائع‘ اس بات کا پابند ہوتا ہے کہ وہ شے کی ملکیت یا کسی مالی حق کو ’مشتری‘ کی طرف منتقل کردے اور ’مشتری‘ اس بات کا پابند ہوتا ہے کہ وہ ’بائع‘ کو ثمن کی ملکیت دے۔ ’بیع‘ کے تین ارکان ہیں یعنی’صیغہ‘ (ایجاب وقبول)، ’فریقین عقد‘ اور ’معقود علیہ‘۔ اور اس کی سات شرائط ہیں: 1- بائع اور مشتری کی رضامندی۔ 2- عقد کرنے والا ایسا ہو جس کا تصرف کرنا جائز ہو یعنی ان میں سے ہر ایک آزاد، مکلف اور سمجھدار ہو۔ 3- مبیع (فروخت کردہ چیز) ایسی ہو جس سے نفع اٹھانا مطلقاً مباح ہو۔ 4- مبیع، بائع کی ملکیت ہو یا پھر عقد کے وقت اسے اس کی بیع کرنے کی اجازت ہو۔ 5- مبیع، بائع اور مشتری دونوں كو معلوم ہو یا تو اسے دیکھ کر یا پھر اس کے اوصاف جان کر۔ 6- ثمن معلوم ہو۔ 7- مبیع ایسی چیز ہو جسے سپرد کرنے پر قدرت حاصل ہو۔
Indonesia Jual beli adalah transaksi sesuai syariat yang harus ditepati oleh dua pihak, yakni penjual harus memindahkan kepemilikan sesuatu atau hak harta kepada pembeli, dan pembeli harus memberikan kepemilikan harga kepada penjual. Rukun jual-beli ada tiga, yaitu sigat (ijab dan kabul), dua orang yang bertransaksi dan barang. Sedangkan syaratnya ada tujuh: 1. Adanya saling rida dari penjual dan pembeli. 2. Orang yang bertransaksi boleh melakukan perbuatan, yaitu masing-masing berstatus merdeka, mukalaf, dan dewasa. 3. Barang yang dijual harus sesuatu yang boleh dimanfaatkan secara mutlak. 4. Barang yang dijual adalah milik penjual atau ia diizinkan menjualnya saat akad. 5.Barang yang dijual diketahui oleh kedua pihak yang bertransaksi dengan melihat langsung atau gambaran. 6. Harga sudah diketahui. 7. Barang yang dijual dapat diserahkan.

تَمْلِيكُ مَالٍ بِمَالٍ ، وَيُطْلَقُ البَيْعُ أَيْضًا عَلَى الشِّرَاءِ ، وَأَصْلُ البَيْعِ: مُقَابَلَةُ شَيْءٍ بِشَيْءٍ ، وَمِنْهُ المُبَايَعَةُ أَوْ البَيْعَةُ وَهِيَ: المُعَاقَدَةُ وَالمُعَاهَدَةُ ، وَقِيلَ أَصْلُ البَيْعِ مِنَ البَاعِ وَهُوَ الذِّرَاعُ ؛ لأنَّ كُلَّ واحِدٍ مِنَ الـمُتَعاقِدَيْنِ يَـمُدُّ بَاعَهُ لِلأَخْذِ والإِعْطَاءِ.

English "Bay‘": to grant ownership of a property in exchange for another. The word "bay‘" can also mean purchasing. Original meaning: exchanging something for another, as it happens in selling. Derivatives include the word "mubayā‘ah" and "bay‘ah", which mean contracting and giving one's allegiance. It is also said that "bay‘" is derived from "bā‘", which means arm, because each of the transactors would extend their arms to give and take.
اردو بیع کا لغوی معنی ہے مال کے عوض کسی کو مال کا مالک بنانا۔ اس کا اطلاق ’خریدنے‘ پر بھی ہوتا ہے۔ اصل میں بیع کسی شے کو کسی دوسری شے کے مقابلے میں رکھنے کو کہتے ہیں۔ ’مُبَایَعَہ‘ اور ’بَیْعَۃٌ‘ کے الفاظ بھی اسی سے نکلے ہیں جن کا معنی ہے’’ایک دوسرے کے ساتھ عقد و معاہدہ کرنا‘‘۔ ایک قول کی رو سے ’بیع‘ دراصل ’بَاعٌ‘ سے ماخوذ ہے جس کا معنی ہے ’بازو‘۔ کیونکہ دونوں فریقین عقد اور لین دین کے لیے ایک دوسرے کی طرف بازو بڑھاتے ہیں۔
Indonesia Memberikan hak milik harta dengan kompensasi harta lain. Al-Bai' juga diungkapkan dengan arti membeli. Makna asal al-bai' adalah membalas sesuatu dengan sesuatu. Dari arti ini diambil kata "al-mubāya'ah" dan "al-bai'ah", yaitu kontrak dan perjanjian. Ada yang berpendapat bahwa asal kata al-bai' dari kata al-bā' yaitu hasta; karena masing-masing dari dua orang yang bertransaksi mengulurkan hastanya untuk mengambil dan memberi.

يَرِدُ لَفْظُ (البَيْعِ) فِي مَوَاضِعَ أُخْرَى مِنَ الفِقْهِ كَكِتابِ صَلاةِ في بابِ أَحْكامِ الـمَسَاجِدِ ، وَكِتابِ النِكاحِ في بابِ صِيغَةِ عَقْدِ النِّكاحِ ، وَكِتَابِ الوَقْفِ فِي بَابِ أَحْكامِ الوَقْفِ ، وَغَيْرِهَا.

تَمْلِيكُ مَالٍ بِمَالٍ ، يُقَالُ: بَاعَ السِّلْعَةَ يَبِيعُهَا إِذَا مَلَّكَهَا غَيْرَهُ مُقَابِلَ مَالٍ ، وَالجَمْعُ: بُيُوعٌ ، وَيُطْلَقُ أَيْضًا البَيْعُ عَلَى الشِّرَاءِ ، تَقُولُ: بَاعَ شَيْئًا أَيْ اشْتَرَاهُ ، وَهُوَ مِنَ الأَضْدَادِ ، وَأَصْلُ البَيْعِ: مُقَابَلَةُ شَيْءٍ بِشَيْءٍ ، يُقَالُ: بَاعَ يَبيعُ بَيْعًا أي قَابَلَ شَيْئًا بِشَيْءٍ ، وَمِنْهُ المُبَايَعَةُ أَوْ البَيْعَةُ وَهِيَ: الـمُعَاهَدَةُ ؛ لِأَنَّ كُلاًّ مِنَ الـمُتَعَاهِدَيْنِ أَعْطَى مَا عِنْدَهُ لِصَاحِبِهِ مِنْ عَهْدٍ وَطَاعَةٍ ، وَقِيلَ أَصْلُ البَيْعِ مِنَ البَاعِ وَهُوَ الذِّرَاعُ ؛ لأنَّ كُلَّ واحِدٍ مِنَ الـمُتَعاقِدَيْنِ يَـمُدُّ بَاعَهُ لِلأَخْذِ والإِعْطَاءِ.

بيع

معجم مقاييس اللغة : 1 /327 - لسان العرب : 8 /25 - المعجم الوسيط : ص79 - معجم مقاييس اللغة : 1 /327 - المعجم الوسيط : ص79 - الزاهر في غريب ألفاظ الشافعي : ص130 - شرح حدود ابن عرفة : 1 /326 - المصباح المنير : ص27 - فتح القدير لابن الهمام : 5 /455 - بداية المجتهد ونهاية المقتصد : 2 /108 - رد المحتار على الدر المختار : 4 /3 -