التصنيف: أخرى .

ظَعِينَةٌ

English Woman/Howdah
اردو کجاوے میں بیٹھی ہوئی خاتون۔

الْمَرْأَةُ فِي الْهَوْدَجِ -وَهُوَ مَرْكَبٌ مِنْ مَرَاكِبِ النِّسَاءِ-.

English Woman sitting inside a howdah, which is a means of transport for women.
اردو ہودج میں موجود عورت۔ ’ہودَجْ‘ عورتوں کی سواریوں میں سے ایک سواری ہے۔

الظَّعِينَةُ حَقِيقَةً النَّاقَةُ التي يُظْعَنُ أَيْ يُرْحَلُ عَلَيْهَا، وَأُطْلِقَ عُرْفًا عَلَى الْمَرْأَةِ فِي الْهَوْدَجِ، وَالهَوْدَجُ: مَرْكَبٌ مِنْ مَرَاكِبِ النِّسَاءِ يُصْنَعُ مِنَ العِصِيِّ، ثمَّ يُجْعَلُ فَوْقَهُ الْخَشَبُ فَيُقَبَّبُ وَيُسْتَرُ بِالثِّيَابِ.

English “Zha‘eenah” (woman/howdah) originally referred to the she-camel which people ride for the purpose of travel. Then it was commonly used to refer to the woman inside the howdah, one of the means of transport for women. A howdah is a seat made from poles and fitted with a canopy.
اردو ’ظعینہ‘ دراصل اس اونٹنی کو کہتے ہیں جس پر سفر کیا جاتا ہو۔ عُرفِ عام میں اس کا اطلاق ہودج (محمل) میں سوار عورت پر کیا جانے لگا۔ ہودَج (محمل) عورتوں کی ایک سواری ہے، جو لاٹھیوں سے بنائی جاتی ہے، پھر اُس کے اوپر لکڑیاں کھڑی کرکے اسے قبّہ نما بنا دیا جاتا ہے اور اس پر کپڑے سے پردہ کردیا جاتا ہے۔

الظَّعِينَةُ: الـمَرْأَةُ، وَسُمّيَتْ بِذَلِكَ لِأَنَّهَا تَظْعَنُ، أَيْ تَرْحَلُ، إذا ظَعَنَ زَوْجُهَا، وَتُقِيْمُ إذا أَقَامَ. وَقِيْلَ: الظَّعِيْنَةُ الجَمَلُ الذي يُرْكَبُ عَلَيْهِ، وَإِنَّمَا سُمِّيَتْ الْمَرْأَةُ ظعينةً لِأَنَّهَا ترَكْبُهُ، وَقِيْلَ: الظَعِيْنَةُ: الهَوْدَجُ سواءٌ كَانَتْ فِيْهِ امْرَأَةٌ أوْ لَمْ تَكنْ، وَإِنَّمَا سُميَّتْ الـمَرْأَةُ ظَعِيْنَةً لِأَنَّهَا تَكونُ فِيْهِ.

English “Zha‘eenah”: woman, riding camel, howdah. It is derived from “yazh‘an”, which means to travel. The woman was called “zha‘eenah” because she travels when her husband travels and settles when he settles. She is also said to have gained this name because she used to ride camels or sit inside howdahs, both of which are called “zha‘eenah”.
اردو ’ظعینہ‘ سے مراد عورت ہے۔ اس کا یہ نام اس لیے پڑا؛ کیوں کہ جب اُس کا شوہر کوچ کرتا ہے، تو وہ بھی کوچ کرتی ہے اور جب وہ اقامت پذیر ہوتا ہے، تو وہ بھی اقامت پذیر ہوتی ہے۔ یہ بھی کہا گیا ہے کہ ’ظعینہ‘ دراصل سواری کے اونٹ کو کہا جاتا ہے اور عورت کو ظعینہ اس لیے کہا گیا؛ کیوں کہ وہ اس پر سواری کرتی ہے۔ ایک قول یہ بھی ہے کہ ’ظعینہ‘ ہودج کو کہتے ہیں؛ خواہ اس میں عورت موجود ہو یا نہ ہو اور عورت کو ’ظعینہ‘ سے موسوم اس لیے کیا گیا؛ کیوں کہ وہ اُس میں رہتی ہے۔

الظَّعِينَةُ: فَعِيلَةٌ بِمَعْنَى مَفْعُولَةٍ، وَهِيَ في الأَصْلِ: الـمَرْأَةُ، وَسُمّيَتْ بِذَلِكَ لِأَنَّهَا تَظْعَنُ –أَيْ تَخْرُجُ وَتَسِيْرُ وَتَرْحَلُ وَتَشْخَصُ- إذا ظَعَنَ زَوْجُهَا، وَتُقِيْمُ إذا أَقَامَ. وَقِيْلَ: بَلْ الظَّعِيْنَةُ الجَمَلُ الذي يُعْتَمَلُ وَيُرْكَبُ عَلَيْهِ، وَإِنَّمَا سُمِّيَتْ الْمَرْأَةُ ظعينةً لِأَنَّهَا ترَكْبُهُ فَيُقَالُ: ذَهَبَتْ الظَّعِيْنَةُ وَأَقْبَلَتْ الظَّعِيْنَةُ وَهِي رَاكِبَةٌ وَكَانَ إِقْبَالُهَا وَإِدْبَارُهَا بِهِ فَسُمِّيَتْ بِهِ كَمَا سُمِّيَتْ الـمَزَادَةُ التي يُحْمَلُ فِيْهَا الـمَاءُ، رَاوِيَةً وَإِنَّمَا الرَّاوِيَةُ البَعِيْرُ الذي يُسْتَقَى عَلَيْهِ، وَقِيْلَ: الظَّعِيْنَةُ: الهَوْدَجُ كَانَتْ فِيْهِ امْرَأَةٌ أوْ لَمْ تَكنْ، وَإِنَّمَا سُميَّتْ الـمَرْأَةُ ظَعِيْنَةً لِأَنَّهَا تَكونُ فِيْهِ؛ ظَعَنَ يَظْعَنُ ظَعْناً وَظَعَناً وَظُعُوناً، وَجَمْع الظَّعِيْنَةِ: ظُعْنٌ وَظُعُنٌ، وَظَعَائِنٌ وَأَظْعَانٌ وظُعُناتٌ، والأَخيرَتانِ جَمْعُ الجَمْعِ.

ظعن

العين : 2 / 88 - البناية شرح الهداية : 4 / 153 - معجم لغة الفقهاء : ص 296 - شرح منتهى الإرادات : 3 / 458 - جمهرة اللغة : (3/ 1256) - غريب الحديث لأبي عبيد : (4/ 437- 438) - تهذيب اللغة للأزهري : (2/ 180) - الصحاح للجوهري : (6/ 2159) - مجمل اللغة : (ص: 600) - المحكم والمحيط الأعظم : (2/ 67) - تاج العروس : (35/ 363) - الـمجموع شرح الـمهذب : (7/ 86) - تحفة المحتاج في شرح المنهاج : (3/ 186) - الـمغني لابن قدامة : (9/ 609) - شرح منتهى الإرادات : (3/ 458) - المحكم والمحيط الأعظم : (4/ 153) - الـمجموع شرح الـمهذب : (7/ 86) -